45

5 اگست کو کشمیر سے آزادی چھین لی گئی تھی۔ سابق بھارتی وزیر خزانہ

  • 5 اگست کو کشمیر سے آزادی چھین لی گئی تھی۔ سابق بھارتی وزیر خزانہ

    بھارت کے سابق وزیر خزانہ پی چدمبرم نے کہا جموں کشمیر کے لوگوں کو پیسوں کی نہیں بلکہ آزادی اور ان کے حقوق کی بحالی کی ضرورت ہے۔کشمیرمیڈیا کے مطابق پی چدمبرم نے یہ بات جموں کشمیر اور لداخ کے لئے بجٹ میں رقم اخز کرنے کے بھارتی حکومت کے فیصلے کے رد عمل میں نئی دہلی میں آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے صدر دفاتر میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ مزید کہا کہ جموں کشمیر اور لداخ کے عوام کو آزادی اور اپنے حقوق کی بحالی کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ صرف ایک آزاد معاشرہ اور آزاد ماحول میں سانس لینے والے افراد ہی ترقی کے پھل سے لطف اندوز ہوسکتے ہیں اور ترقی کے کام میں حصہ لے سکتے ہیں۔ چدمبرم نے کہا کہ اگرحکومت سمجھتی ہے کہ وہ پیسوں کے بدلے آزادی چھین سکتی ہے توہ بالکل غلط سوچ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کا یہ فیصلہ کشمیری عوام کو راضی کرنے کی ناکام اور منافقانہ کوشش ہے اور وہ کامیاب نہیں ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری آزادی چاہتے ہیں اور 5 اگست کو کشمیر سے آزادی چھین لی گئی ہے اور عوام اب بھی بغیر کسی الزام کے حراست میں ہیں۔ دنیا اس حقیقت کا نوٹس لے رہی ہے کہ بھارت نے 6 ماہ سے کشمیر کے لوگوں کی آزادی ہڑپ کر رکھی ہے۔ سابق بھارتی وزیر نے کہا کہ حکومت کو سب سے پہلے کشمیری عوام کی آزادی بحال کرنے کا سوچنا چاہیے اور پھر پیسوں اور شاعری کی بات کرنی چاہیے۔ پی چدمبرم کی طرف سے شاعری کا حوالہ کشمیری زبان میںاس نظم کی طر ف اشارہ تھاجوسیتارامن نے بجٹ تقریر کے وقت پڑھی تھی ۔اس سے قبل بھارتی وزیر خزانہ نرملا سیتھارمن نے بجٹ پیش کرتے ہوئے جموں کشمیر کے لئے30, 757 کروڑ اور لداخ کے لئے5, 958 کروڑ روپے مختص کرنے کا اعلان بھی کیا تھا۔

  • اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

    اپنا تبصرہ بھیجیں