144

حصول علم کے لیے والد کے ساتھ روزانہ 12 کلومیٹر کا سفر

افغانستان میں صوبہ پکتیکا کے دارالحکومت شرنہ کے رہنے والے میا خان روزانہ اپنی بیٹیوں کو موٹرسائیکل پر 12 کلومیٹر کا سفر کرکے سکول لاتے اور چھٹی کے بعد واپس گھر لے جاتے ہیں۔ یہ میا خان ک کا معمول بن چکا ہے۔
میا خان کا کہنا ہے کہ ’میں ان پڑھ شخص ہوں، اور روزانہ اجرت پر کام کرتا ہوں، لیکن میری بیٹی کی تعلیم میرے لیے قیمتی ہے کیونکہ ہمارے علاقے میں کوئی لیڈی ڈاکٹر نہیں ہے۔ میری یہ خواہش ہے کہ میں اپنی بیٹیوں کو بھی بیٹوں کی طرح تعلیم دوں۔‘
میا خان اپنی بیٹی کو روزانہ سویڈش کمیٹی برائے افغانستان کے تحت چلنے والے نُورانیہ سکول لاتے ہیں۔ یہ اس بات کی عکاسی کرتا ہے کہ گاؤں کے مقیم تعلیم کے حوالے سے کتنی دلچسپی رکھتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں